heart touching poetry in urdu

heart touching poetry in urdu

Heart Touching Poetry In Urdu

مجھے مردہ سمجھ کے رو لے

اب اگر میں زندہ ہوں

تو تیرے لئے نہیں ہوں

Mujhe murda samajh ky ro le

ab ager main zinda hu

to tere liye nahi hu


صبر کی حد بھی تو ہوتی ہے

کتنا پلکوں پہ سنبھالیں پانی

Sabar ki had bhi to hoti hai,

kitna palkon pe sambhalen pani?


کوئی شام مجھ میں قیام کر،

میرے رنگ رُوپ کو نکار دے

جو گزر گئی سو گزر گئی

میری باقی عمر سنوار دے

koyi sham mujh main qayam kar,,,

mere rang roop ko nikhaar de,,

jo guzar gayi so guzer gayi

meri baqi umar sanwaar dy


کوئی کتنا ہی خوش مزاج کیوں نہ ہو

رلا دیتی ہے کسی کی کمی کبھی کبھی

——- 

آج شدت سے۔۔۔۔ دل چاہ رہا ہے

بند آنکھیں کھولوں تو سامنے تم ہو۔

——-

تو سمجھتا ہے گر فضول مجھے

کر کے ہمت زرا سا بھول مجھے

——-

چلتے رہیں گے قافلے میرے بعد بھی یہاں

اک ستارہ ٹوٹ جانے سے فلک تنہا نہیں ہوتا

——-

ویسے ہی تمہیں وہم ہے،افلاک نشیں میں

تم لوگ بڑے لوگ ہو، ہم خاک نشیں ہیں

——-

بچھڑ کر راہِ عشق میں اس قدر ہوئے تنہا

تھکے تنہا،

گرے تنہا،

اُٹھے تنہا،

چلے تنہا۔۔

——-

پتہ نہیں سدھر گیا۔۔۔۔۔۔ کہ بگڑ گیا

یہ دل اب کسی سے بحث نہیں کرتا

——-

ہائے اُسے خبر نہیں ہوتی

میں جب جب تڑپتا ہوں اسکے لئے

——-

مجھے بسا کر میری سانسوں میں

مجھے سانس سانس کا محتاج کر دیا

——-

محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے

تیری محفل میں لیکن ہم نہ ہوں گے

——-

ٹوٹ سا گیا ہے میری چاہتوں کا وجود

اب کوئی اچھا بھی لگے تو ہم اظہار نہیں کرتے

——-

حق تنقید تمہیں ہے مگر اس شرط کے ساتھ

جائزہ لیتے رہو اپنے بھی گریبانوں کا

——-

کیا ضروری ہے کہ 

چاہیں تو جتائیں بھی

——-

اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے

تیری مرضی کے مطابق نظر آئیں کیسے

——-

بہت لوگ بدلتے دیکھے

مگر تو جو بدلہ کمال بدلہ

——-

ہم اپنی وفا پر تو فخر نہیں کرتے مگر اتنا بھروسہ ہے

کہ ہمارے بعد ہم جیسا تم پا نہ سکو گے

——-

کتنے سادہ ہیں فقیروں کے عقیدے

دیکھ لینے کو ملاقات سمجھ لیتے ہیں

——-

خط جو میں نے لکھا انسانیت کے نام پر

ڈاکیا ہی مر گیا، پتہ پوچھتے پوچھتے

——-

لوگ مرتے ہیں حسن پر

ہمارا دل تو تیری گفتگو پر مرتا ہے

——-

ہم چپکے سے دبے پاوں۔۔

تیری کہانی سے نکل جائیں گے۔۔

——-

کہا تھا نہ۔ کہ بھول جاو گے مجھے

اور میری اِس بات پر اکثر لڑا کرتے تھے تُم

——-

پتہ ہے تکلیف کیا ہے؟؟

کسی کو چاہنا

پھر اسے کھو دینا

اور خاموش ہو جانا

——-

پچپن کی سب سے بڑی غلط فہمی

بڑے ہو کر زندگی اچھی ہو جائے گی۔

——-

ہر پھول خوشبودار نہیں ہوتا۔

ہر دوست وفادار نہیں ہوتو

نظروں سے نظریں مِلی ہیں اکثر

ہر نظر کا مطلب پیار نہیں ہوتا۔

——-

کبھی کبھی تیرے ہی گلے لگ کر

تجھ سے تیری ہی شکایت کرنے کو جی چاہتا ہے۔

——-

یہ تقاضہ عشق ہے یا میری آنکھوں کی مستی

کھولوں تو دیدار تمہارا بند کروں تو تصور تمہارا۔

——-

مین اِک درد ہوں صاحب

اور درد بھلا کون سہتا ہے

——-

خاموشیاں کر دیں بیاں تو الگ بات ہے زین

کچھ درد ہیں جو لفظوں میں اتارے نہیں جاتے

——-

کچھ ایسے حادثے بھی زندگی میں ہوتے ہیں

کہ انسان بچ تو جاتا ہے، مگر زندہ نہیں رہتا

——-

وہ ڈھونڈے مجھے نگر نگر

میری خاک بھی نا ملے اسے

——-

سچ پوچھتے ہو تو اک بات کہوں؟

تماشا ہے جسموں کا محبت مر چکی ہے

——-

اتنی شدت تو آنسووں میں پہلے کبھی نہ تھی

دیکھا اپنے نصیب کو تو سرِ عام رو دیئے

——-

کبھی تقدیر کا ماتم کبھی محبوب سے شکوہ

اے منزلِ محبت تیرے ہر موڑ پہ رونا آیا

——-

بڑی مشکل سے پایا ہے

تمہیں اب کھو نہیں سکتی

تہماری تھی تمہاری ہوں

کسی کی ہو نہیں سکتی

——-

بات یہ ہے کہ لوگ بدل جاتے ہیں

ظلم یہ ہے کہ مانتے بھی نہیں۔۔۔۔

——-

میری زندگی بھی اُس قبرستان کی طرح ہے 

جہاں لوگ تو بہت ہیں مگر اپنا کوئی نہیں

——-

وہ جو کہتا تھا تارے توڑ لاوں گا

اس نے آسمان ہی گرا دیا مجھ پر

——-

کسی معصوم لمحے میں کسی مانوس چہرے سے

محبت کی نہیں جاتی محبت ہو جاتی ہے

——-

مجھے عشق کے ع اور ش کا نہیں پتہ 

لیکن ق سراسر قاتل ہے

——-

وفا کے اس شہر مین ہم جیسا سوداگر نہ ملے گا

ہم تو آنسو بھی خرید لیتے ہیں اپنی مسکراہٹ دے کر

——-

مخلصی ہے جُرم یہاں 

ہو سکے تو منافقت کیجئے

——-

وقت کی طرح تھا ہو

کبھی ملا ہی نہیں

——-

ہر طرف سے ہو رہی ہے تجھ پہ شاعری

اے دسمبر ذرہ بتا تیری خاصیت ہے کیا

——-

درد دینے کا تجھے بھی شوق تھا بہت

اور پھر دیکھ ہم نے بھی سہنے کی انتہا کر دی

——-

ملے تو ہزارون لوگ تھے زندگی میں

وہ سب سے الگ تھا جو قسمت میں نہیں تھا

——-

تم نے روٹھنے میں جلدی کی

بچھڑ تو سیسے بھی جانا تھا۔

——-

دن ان سے جا ملا

جن سے مقدر نہیں ملتا

——-

آج تو دل کے درد پر ہنس کر 

درد کا دل دُکھا دیا میں نے

——-

تیرے عشق سے پہلے 

مشہور تھیں انائیں میری

——-

لباس تن سے اتار دینا

کیس کو بانہوں کا ہار دینا

پھر اس کے جذبوں کو مار دینا

اگری یہی محبت ہے جانا

تو معاف کرنا مجھے نہیں ہے۔

——-

نفرت ہو جائے گی تجھے خود سے 

اگر میں بات کروں تجھ سے تیرے ہی لھجے میں

——-

جن کے لفظوں میں تمہیں اپنا عکس ملے

بہت مشکل ہے کوئی ایسا شخص ملے

——-

غم دنیا بھی غم یار میں شامل کر لو

نشہ بڑھتا ہے شرابیں جو شرابوں میں ملیں

مجھے تم سے شکایت نہیں لیکن 

یاد آتا ہے تیرا مجھ سے محبت کرنا

——-

لوگ دیوانے ہیں بناوٹ کے

ہم کہاں جائیں سادگی لے کر

——-

یہ جو آنکھوں مین میرے پانی ہے

اک مہرباں کی مہربانی ہے۔۔۔

——-

زندگی سے شکوہ نہیں کہ اُس نے غم کا عادی بنا دیا

گِلا تو اُن سے ہے جنہوں نے روشنی کی اُمید دکھا کر دِیا بُجھا دیا

——-

محبت مل نہیں پاتی مجھے معلوم ہے

مگر خاموش رہتی ہوں محبت کر جو بیٹھی ہوں

——-

تھوڑی سی خودداری بھی تو لازم تھی

اس نے ہاتھ جھڑایا، میں نے چھوڑ دیا

——-

یوںہی کبھی کبھی بیٹھے بٹائے آیا تیرا خیال

ہم لاکھ غمزدہ تھے مگر مسکرا دیے

——-

میں تباہ ہوں تیرے پیار میں تجھے دوسروں کا خیال ہے

کچھ میرے مسئلے پر غور کر، میرے زندگی کا سوال ہے۔

——-

حسن کیا چھیز ہے؟ وقت کے سامنے

تو قیامت سہی۔۔۔۔۔۔۔۔ تا قیامت نہیں

——-

یہ علاج بتایا ہے طبیب نے اُسے بھلانے کا 

کہ رفتہ رفتہ تیم اپنی یاداشت کھو بیٹھو

——-

جیسے تہمیں ہم نے چاہا ہے کون بھلا یوں چاہے گا

مانا اور بہت آئیں گے تم سے پیار جتانے لوگ

——-

تھے یہ شک ہے کہ تیرے لئے جان نہ دے پاوں گا

مجھے یہ ڈر ہے کہ تو بہت روئے گا مجھے آزمانے کے بعد

Read more:

romantic whatsapp status video free download

heart touching poetry in urdu